روشن صبح کی تلاش

روشن صبح کی تلاش

میں ساکت کھڑا ہوں اک شام میں
مجھے روشن صبح کی تلاش ہے

کہاں ٹھہر گئی ہے زندگی
میرا دل کیوں اتنا اداس ہے

وہ جو میرے اندر اک شخص خاص تھا
اس کا کفن آج میرے پاس ہے

کہیں سے پھوٹے چشمہ امید کا
میری روح کو زمزم کی پیاس ہے

Safia Mushtaq